Ads are placed to support costs of domain and hosting. All Ads are random and are not chosen by Nohay Lyrics: Sorry for any inappropriate ads.

Maa Zahra Lyrics | Mesum Abbas 2021

Maa Zahra Lyrics – Mesum Abbas 2021

Maa Fatima Zahra (sa)

Kiya Ye Zainab o Kulsoom Ne Noha Aye Maa Zahra

Sar-e-Darbar batlao Howa Kya Kya Aye Maa Zahra

Suna Hai Aap ko darbar mein Pehron Khara rakha

yeh keh do jhoot hai zalim ne tum ko hai kaha jhota

yeh hathoon mein hai kis tehreer ka tukra aye maa zahra

Mishan kaisay hain chehre par rida se jo chupati ho

naar hum betiyon ki apne rukh se kyun hatati ho

batao ho gaya rukhsar kyun neela aye maa Zahra.

Yaqeen Aata nhi Bint-e-Nabi Jis waqt Roti thi

Wahan par Qehqahey lagtay they our Ummat yeh Hansti thi

Taraptay hoon gay Manzar Dekh Kar Nana Aye Maa Zahra.

Duaien Maon Ki Khaliq kabhi bhi rad nhi karta

Hamaray haq main karna jab dua tu bas yehi karna

na ho hum ko kabhi darbar mein jana aye maa Zahra

Bas ik din main hi Amma Ap ki halat yeh badli hai

Kamar khum ho gayi hai our baloom main safaidi hai

Tumain ek pal ko hum ne bhi na pehchana aye maa Zahra

Galay lag jao mere aao maa ke pass aa jaou

Meri Shehzadiyo main theek houn hargiz na ghabrao

yeh keh kar tum hamara dil na behlana aye maa zehra

Yahi Azlan o Mesum Betiyan kehti rahein ro kar

Tumharay haal se zahir hai sab darbar ka manzar

saha jo zulm tum ne chup nhi sakta aye maa Zahra

ماں فاطمہ زہرا س

کیا یہ زینب و کلثوم  س نے نوحہ اے ماں زہرا س

سرے دربار بتلاو ہوا کیا کیا اے ماں زہرا س

سنا ہے دربار میں پہروں کھڑا رکھا

یہ کہ دو جھوٹ ہے طالم نے تم کو ہے کہا جھوتا

یہ ھاتھوں میں ہے کس تحریر کا ٹکڑا اے ماں زہرا س

نشاں کیسےہے چہرے پر ردا سے جو چھپاتی ہو

نظر ہم بیٹیوں کی اپنے رخ سے کیوں ہٹاتی ہو

بتاو ہو گیا رخسار کیوں نیلا اے ماں زہرا س

یقیں آتا نہیں بنت نبی جس وقت روتی تھی

وہاں پر قہقھے لگتے تھے اور امت یہ ہستی تھی

تڑپتے ہوں گے منظر دیکھ کرنانا اے ماں زہراس

دعائیں ماوں کی خالق کبھی بھی رد نہیں کرتا

ہمارے حق میں کرنا جب دعا توبس یہی کرنا

نہ ہو ہم کو کبھی دربار میں جانا اے ماں زہرا س

بس ایک دن میں اماں آپکی حالت یہ بدلی ہے

کمر خم ہو گئی ہے اور بالوں میں سفیدی ہے

تمھیں اک پل کو ہم نے بھی نہ پہچانا اے ماں زہرا س

گلے لگ جاومیرے  آو ماں کے پاس آجاو

میری شہزادیو میں ٹھیک ہوں ہرگز نہ گھبراو

یہ کہ کر تم ہمارا دل نہ بہلانا اے ماں زہرا س

یہی ازلان و میثم بیٹیاں کہتی رہی  رو کر

تمھارے حال سے ظاہر ہے سب دربار کا منظر

سہا جو ظلم تم نے چھپ نہیں سکتا اے ماں زہرا س

Noha TitleMaa Zehra sa
Reciter NameMesum Abbas
Poetry ByAzlan Azmi
Released On Mesam Abbas  YouTube  Channel
Released ByAyyam e Fatima 
CategoryNoha
Released Yearyam e Fatima 2021
Posted By Nohay Lyrics
Soz/CompositionMesum Abbas

Leave a Reply

error: Content is protected By the Owner of Nohay Lyrics !!