Ads are placed to support costs of domain and hosting. All Ads are random and are not chosen by Nohay Lyrics: Sorry for any inappropriate ads.

Qabr E Zehra Dhoop Main Lyrics | Farhan Ali Waris 2020

Qabr E Zehra Dhoop Main Lyrics

Misl-e-Pehlu Hay Sakista Qabr Zahra (sa) Dhoop Main

Saye Main Baba Ka Roza
Qabr Zahra (sa) Dhoop Main

Gumbad Khizra Kay Saye Main Nahi Rehtay Rasool (S)
Apni Ummat Kay Sitam Par Ho Rahay Hain Dil Malool
Daikhtay Hain Roz Aaqa
Babr Zahra(sa) Dhoop Main

Kal Jala Zahra (sa) Ka Dar Aor Koi Kuch Bola Nahi
Ajj Bhi Khamosh Hain Sab Koi Kuch Kehta Nahi
Daikhta Hay Shehr Sara
Qabr Zahra(sa) Dhoop Main

Aik Hi To Hay Muhammad Mustafa (S) Ki Kainat
Kiya Musalmano Yahi Insaf Hay Bibi (sa) Ky Sath
Chaon Main Ahl-e-Madina
Qabr Zahra (sa) Dhoop Main

Gurbat Bint Nabi Par Ro Rahay Thay Khud Ali (as)
Jab Utha Shab Main Janaza Daikh Na Paya Koi
Daikhti Hay Ajj Dunya
Qabr-e-Zahra (sa) Dhoop Main

Maa To Maa Hay Bhoolti Manzar Wo Kis Tarah Bhala
Haye Begor Kafan Tha DhoopMain Baccha Mera
AjjBhi KartiHay Girya
Qabr Zahra (sa) Dhoop Main

Qabr Main Jakar Bhi Aansu Ruk Na Paingay Kabi
Do Sitam Sajjad (as) Ko Tarpa Rahay Hain Ajj Bhi
Sani Zahra (sa) Ka Parda
Qabr Zahra (sa) Dhoop Main

Din Main Surah Ka Safar Ho Ya Ki Ho Tareek Shab
Dono Manzar Hain Azadaron Kay Ronay Ka Sabab
Qabr Zahra (sa) Par Andhera Qabr Zahra (sa) Dhoop Main

Qabr E Zehra Dhoop Main Urdu Lyrics

مثلِ پہلو ہے شکستہ قبرِ زہرا(س) دُھوپ میں

سائے میں بابا(ع) کا روزہ
قبرِ زہرا(س) دُھوپ میں

گنبدِ خضری کے سائے میں نہیں رہتے رسول ص
اپنی امت کے ستم پر ہو رہے ہیں دل ملول
دیکھتے ہیں روز آقا ص)
قبرِ زہرا(س) دُھوپ میں

کل جلا زہرا(س) در اور کوئی کچھ بولا نہیں
آج بھی خاموش ہیں سب کوئی کچھ کہتا نہیں
دیکھتا ہے شہر سارا
قبرِ زہرا(س) دُھوپ ہیں

ایک ہی تو ہے محمد مصطفے ص کی کائنات
کیا مسلمانوں یہی انصاف ہے بی بی کے ساتھ
چھاؤں میں اہلِ مدینہ

غربتِ بنتِ نبی پر رو رہے تھے خود علی ع
جب اٹھا شب میں جنازہ دیکھ نہ پایا کوئی
دیکھتی ہے آج دنیا

ماں تو ماں ہے بھولتی منظر وہ کسطرح بھلا
ہائے بے گور و کفن تھا دھوپ میں بچّہ میرا
آج بھی کرتی ہے گریہ قبرِ زہرا(س) دُھوپ میں

قبر میں جا کر بھی آنسو رک نہ پائیں گے کبھی
دو ستم سجاد ع کو تڑپا رہے ہیں آج بھی
ثانیِ زہرا کا پردہ قبرِ زہرا دھوپ میں

دن میں سورج کا سفر ہو یا کہ ہو تاریک شب
دونوں منظر ہیں عزاداروں کے رونے کا سبب
قبرِ زہراس پر اندھیرا قبرِ زہرا دھوپ میں

استغاثہ پے فرحان و تکلم اختتام
پردئے غیبت اُٹھا کر آئیے جلدی امام عجل
مستکل ہےمیرے مولا
قبرِ زہراس دھوپ میں

Leave a Reply

error: Content is protected By the Owner of Nohay Lyrics !!